سینیٹ اجلاس: شاکراللہ کا قتل مقدمہ مودی کیخلاف درج کرانے کا مطالبہ

سینیٹ میں ارکان نے بھارت میں پاکستانی شہری شاکر اللہ پر تشدد اور ان کے قتل پر بھارتی وزیر اعظم مودی کے خلاف پاکستان اور بھارت میں مقدمات درج کرانے کا مطالبہ کیا۔ وزراء کی عدم موجودگی پر اپوزیشن نے ایوان سے دو بار واک آؤٹ کیا۔ کورم کی کمی کے باعث چئیرمین کو اجلاس جلد ملتوی کرنا پڑا۔

 

چیئرمین صادق سنجرانی کے زیر صدارت اجلاس میں شیری رحمان نے نکتہ اعتراض پر بھارتی جیل میں قتل کئے گئے پاکستانی قیدی شاکر اللہ کا معاملہ اٹھایا۔

 

شیری رحمان نے کہا کہ شاکراللہ کو جیل میں تشدد کر کے قتل کیا گیا اور 11 روز بعد سرحد پر اس کی لاش دی گئی۔ شاکراللہ جنگی قیدی نہیں تھا۔ بھارتی حکومت شاکراللہ کی میڈیکل رپورٹس شیئر نہیں کر رہی، وہ بھارت کی ریاستی تحویل میں تھا، وزیر خارجہ مصروف ہیں، وزیر انسانی حقوق ہی جواب دیں۔

 

بیرسٹر سیف، عبدالقیوم، سینیٹر مشتاق اور دیگر نے بھی حکومت سے عالمی سطح پر آواز اٹھانے کی بات کی۔ وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری نے کہا کہ حکومت معاملہ اٹھانے کے لئے متعلقہ فورم اور معاہدے کا جائزہ لے رہی ہے۔ بھارتی جیل میں سرکاری سرپرستی میں ان پر تشدد کیا گیا۔

 

شیریں مزاری کا کہنا تھا کہ یہ معاملہ عالمی سطح پر اٹھایا جائے گا۔ بیرسٹر سیف اور دیگر نے کہا کہ بھارتی وزیراعظم کے خلاف اس قتل پر اپنی ملک میں مقدمہ درج کیا جائے۔ شیریں مزاری نے کہا کہ انہیں ایک دن کی مہلت دیں اس پر ایوان کو آگاہ کریں گے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

گذشتہ شمارے